ہنگو(سی این این )چینی قونصلیٹ میں دہشتگردوں کا حملہ سیکیورٹی فورسز نے ناکام بنا دیاہے تاہم اس کے بعداب ہنگو میں خود کش  دھماکے کی افسوسناک خبر موصول ہوئی ہے جس میں 31 افراد شہید  اور 4o زخمی ہو گئے ہیں ،بیشتر زخمیوں کی حالت انتہائی تشویش ناک بتائی جا رہی ہے جس کی وجہ سے جاں بحق افراد کی تعداد میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے،دوسری طرف سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر تحقیقات کا آغاز کردیا ہے،خود کش دھماکہ تحصیل کلایہ میں لگنے والے ہفتہ وار میلے میں ہوا جس میں بڑی تعداد میں لوگ موجود تھے ہنگو میں لوئر اورکزئی کے علاقے کلایابازار میں واقع مدرسے کے مین گیٹ کے سامنے زور دار دھماکا ہوا جس کی آواز دور دور تک سنی گئی،خود کش دھماکے میں 31 افراد جاں بحق جبکہ 40  زخمی بھی ہوئے جبکہ  بیشتر زخمیوں کی حالت انتہائی تشویش ناک بتائی جا رہی ہے جس کی وجہ سے جاں بحق افراد کی تعداد میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے ۔جاں بحق ہو نے والے افراد میں 3 کم سن بچے بھی شامل ہیں ۔خود کش دھماکے کے فوری بعد سیکیورٹی فورسز نے علاقے کا محاصرہ کرکے سرچ آپریشن شروع کردیا ہے جبکہ  زخمیوں میں سے بیشتر کی حالت تشویشناک بتائی گئی، جنہیں طبی امدادکے لیے کوہاٹ اور پشاور کے ہسپتالوں میں منتقل کیا گیاہے ۔کمشنر کوہاٹ ڈویژن کے مطابق موٹرسائیکل سوار خودکش حملہ آور نے خود کو دھماکے سے اڑادیا اور اس کے نتیجے میں 31 افراد  جاں بحق  ہوئے۔کمشنر کوہاٹ نے بتایا کہ دھماکے میں تین بچے اور تین سکھ تاجر بھی مارے گئے۔دوسری طرف مقامی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ دھماکا پلانٹڈ تھا اور بارودی مواد کو ایک موٹرسائیکل میں نصب کیا گیا تھا۔دھماکے میں 8 کلوگرام کے قریب دھماکا خیز مواد استعمال کیا گیا۔دھماکا اس قدر شدید تھا کہ قریب کھڑی گاڑیوں کے شیشے بھی ٹوٹ گئے۔واضح رہے کہ  ضلع اورکزئی میں ہونے والا دھماکا ایک روز کے دوران ملک میں ہونے والی دہشت گردی کی دوسری بڑی کارروائی ہے،اس سے قبل آج صبح کراچی کے علاقے کلفٹن میں دہشت گردوں نے چینی قونصل خانے پر حملہ کرنے کی کوشش کی تھی، جسے سیکیورٹی پر تعینات اہلکاروں نے اپنی جان پر کھیل کر دہشت گردوں کے مذموم عزائم کو ناکام بنا دیا تھا،اس حملے میں 2 پولیس اہلکار شہید، 2 راہ گیر جاں بحق جبکہ سیکیورٹی اداروں کی جوابی کارروائی میں تنیوں حملہ آور ہلاک کردیئے گئے تھے۔خیبرپختونخوا کے وزیر اعلیٰ محمود خان نے لوئر اورکزئی کے علاقے میں دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ دشمن قوتیں صوبے میں پرامن ماحول کو خراب کرنا چاہتی ہیں، اس طرح کے واقعات میں بے گناہ شہریوں کو نشانہ بنانا غیر انسانی عمل ہے۔انہوں نے تمام ہسپتالوں میں ہائی الرٹ کا حکم دیتے ہوئے زخمیوں کو بہتری طبی سہولیات فراہم کرنے کی ہدایت کی۔