اسلام آباد(سی این این) جمعیت علمائے اسلام (س) اور دفاع پاکستان کونسل کے سربراہ مولانا سمیع الحق کے جاں بحق ہونے پر صدر مملکت عارف علوی، وزیر اعظم عمران خان اور آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے اپنے گہرے دکھ اور رنج وغم کا اظہار کیا ہے۔وزیر اعظم عمران خان کو مولانا سمیع الحق کے جاں بحق ہونے کی اطلاع چین میں دی گئی، وزیراعظم نے کہا کہ مولانا سمیع الحق کی سیاسی اوردینی خدمات کو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا، مولانا سمیع الحق کی شہادت سے ملک جید عالم دین اور اہم مذہبی رہنما سے محروم ہوگیا۔مشکل کی گھڑی میں لواحقین کو تنہانہ چھوڑا جائے، وزیر اعظم نے مولانا پر حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے واقعے کی رپورٹ طلب کرلی ہے،وزیراعظم نے واقعے کی فوری تحقیقات اور ذمہ داران کا تعین کرنے کی ہدایت بھی جاری کردی ہے۔آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے مولاناسمیع الحق کے قتل پر واقعے کی مذمت کرتے ہوئے مقتول کے لواحقین سے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔چیف جسٹس ثاقب نثار نے مولاناسمیع الحق پر قاتلانہ حملے میں جاں بحق ہونے پر اظہار افسوس کیا ہے، سابق وزیر اعظم نوازشریف نے مولانا سمیع الحق کے قتل کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے انہوں نے کہا کہ مولانا سمیع الحق پر قاتلانہ حملے میں جاں بحق ہونے کی خبرسن کر بہت دکھ ہوا۔قومی اسمبلی میں اپوزشین لیڈر شہباز شریف نے بھی مولاناسمیع الحق کے قتل کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ مولانا سمیع الحق کا قتل ملک میں فساد پھیلانے کی مذموم سازش ہے۔اس کے علاوہ سربراہ جے یو آئی (ف) مولانا فضل الرحمان نے مولانا سمیع الحق کے قتل پر اظہارافسوس کرتے ہوئے واقعے کی مذمت کی ہے، اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ مولانا کا قتل کھلی دہشت گردی ہے، جو میرے لئے صدمے کا باعث ہے، ان کی موت ہم سے کے لئے بہت بڑا نقصان ہے، ایک عالم دین کا قتل پوری امت کے لئے انتہائی افسوسناک ہوتا ہے۔