اسلام آباد (سی این این)تبدیلی حکومت نے ایک بار پھر عوام پر پٹر ول بم گرانے کا فیصلہ کرلیاہے، پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 13روپے فی لٹر اضافے کا امکان ہے ، اوگرا کی جانب سے پٹرول کی قیمت میں 9روپے دس پیسے فی لٹر ، ڈیزل 13روپے فی لٹر مہنگاکرنے کی سفارش کی گئی ہے جبکہ لائٹ ڈیزل کی قیمت میں 6روپے 48پیسے فی لٹر ، مٹی کے تیل کی قیمت میں 6روپے47پیسے فی لٹر اضافے کی سفارش کی گئی ہے ۔اوگر ا نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کی سمری پٹرولیم ڈویژن کو ارسال کردی گئی ہے جس پر وزارت خزانہ کی جانب سے وزیر اعظم عمران خان کی مشاورت کے بعد کل فیصلہ کیا جائیگا ۔واضح رہے کہموجودہ حکومت نے اقتدار میں آنے کے بعد اب تک پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ نہیں کیا، تحریک انصاف کی حکومت نے ماہ اگست میں اقتدار سنبھالنے کے بعد پیٹرولیم مصنوعات میں کمی کی تھی،اوگرا نے ماہ اکتوبر کیلئے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں 4 روپے اضافے کی تجویز دی تھی لیکن وزیر اعظم عمران خان نے وزرات خزانہ کو قیمتوں میں اضافے سے روک دیا تھا اور قیمتیں برقرار رکھیں تھیں تاہم اب دیکھنا یہ ہے کہ حکومت پٹرولیم مصنوعات میں اضافہ کرتی ہے یا قیمتیں برقرار رکھتی ہے ؟اس بارے میں حتمی فیصلہ وزیر اعظم عمران خان کریں گے ۔