پشاور: عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے کہا ہے کہ جو شخص وزارت عظمی کیلئے سینکڑوں انسانوں کی جانیں لے سکتا ہے وہ قوم کا خیر خواہ کیسے ہو سکتا ہے؟۔ان کا کہنا تھا کہ آج صورتحال2013سے مختلف ہے ، گزشتہ الیکشن میں صرف اے این پی کو ٹارگٹ کیا گیا جبکہ آج تمام سیاسی جماعتیں دہشت گردوں کے نشانے پر ہیں، پشاور ، بنوں اور مستونگ میں دھماکوں سے ثابت ہو چکا ہے کہ یہ سب لاڈلے کو کھلا میدان فراہم کرنے کیلئے ہے۔ صوابی میں شہید شعیب خان کاکا کی تیسری برسی کے موقع پر منعقدہ جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پختون 25جولائی کو اے این پی کو کامیاب کر کے دہشت گردوں کو جواب دیں،عمران خان نے سیاست سے شائستگی ختم کی اور اب سیاسی کارکنوں کو گالیاں دینے پر اتر آ ئے ہیں ایسا شخص قوم کی نمائندگی کا حق نہیں رکھتا ۔ اسفندیار والی خان نے کہا کہ سابق حکومت نے مدرسے کو جو57کروڑ روپے دیئے اس کے نتیجے میں اس بار الیکشن میں ووٹ اورپانچ سال خاموش رہنے کی ڈیل شامل تھی ،اسفندیا رولی نے کہا کہ ہم دھماکوں سے ڈرنے والے نہیں الیکشن میں بھرپور حصہ لیں گے اور کامیاب ہو کر دہشت گردی کے ناسور کا جڑ سے خاتمہ کریں گے۔