بدین (صائمہ خاں)بدین کی تحصیل ماتلی کے علاقے ٹنڈو غلام علی کی پولیس نے چند دن قبل آٹھ سالا معصوم بچے پر جنسی زیادتی کا الزام لگاکر مقدمہ تو درج کرلیا تھا لیکن چار روز گزرجانے کے باوجود پولیس بچے کا میڈیکل کرانے میں ناکام ہوگئی ہے، ایف آئی آر کے متن کے مطابق بچے نے دن دہاڑے سڑک پر سات سالا بچی کو جنسی تشدد کا نشانا بنایا تھا۔۔
بدین کی تحصیل ماتلی کے علاقے ٹنڈو غلام علی کی پولیس نے نابالغ آٹھ سالا بچے اصغر آرائیں کو چار روز قبل جنسی زیادتی کے الزام میں گرفتار کیا تھا لیکن اور ایف آئی آرمتن کے مطابق بچے نے دن دہاڑے بیچ سڑک پر سات سالا بچی سے زیادتی کی تھی اور اب چار روز گرزجانے کے باوجود بچے کا میڈیکل ٹیسٹ نہیں ہوسکا ہے ،مقامی ڈاکٹرز کے مطابق بچہ بالغ نہیں ہے اس لیئے میڈیکل ٹیسٹ میں دشواری پیش آرہی ہے اس لیئے اب بچے کا ٹیسٹ حیدرآباد سے کرایاجائے گا، دوسری جانب بچے کے رشتیداروں نے الزام لگایا کہ مخالفین سے پلاٹ کا تنازع جاری ہے جس کے بعد مخالفین نے بچے پر یہ الزام لگایا تاکہ ہم وہ پلاٹ مخالفین کے حوالے کردیں، دوسری جانب قانونی ماہرین کے مطابق آٹھ سالا بچے پر جنسی زیادتی کا مقدم جووینائل جسٹس سسٹم آرڈیننس 200 کے خلاف ورزی ہے ۔۔۔