اسلام آباد(ایم پرویز اشرف بٹ) بادام میں متعدد وٹامنز اور ایسے اجزاء ہوتے ہیں جو جسم کو صحت مند اور شخصیت کو خوبصورت بناتے ہیں۔ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ روزانہ بادام کی صرف 4 گریاں کھانے سے جسم پر نمایاں مثبت اثرات مرتب ہوتے ہیں۔بادام جسم کے لیے نقصان دہ کولیسٹرول کی سطح میں کمی لانے کے لیے موثر ترین غذاؤں میں سے ایک ہیں۔ اگر کولیسٹرول بہت زیادہ ہو تو گریوں کی تعداد دن بھر میں چار کی بجائے 20کردیں۔ عام طور پر زیادہ کولیسٹرول کی علامات ، ٹانگوں میں خارش اور قبل از وقت سفید بالوں کی شکل میں سامنے آتی ہیں۔باداموں میں وہ سب وٹامن اور اجزاء ہوتے ہیں جو بالوں کی نشوونما کے لیے ضروری ہوتے ہیں اور انہیں مضبوط بناتے ہیں، اس میں موجود میگنیشم اور زنک بالوں کی نشوونما بہتر کرتے ہیں، جبکہ وٹامن ای انہیں مضبوط اور وٹامن بی چمکدار اور لمبی عمر دیتے ہیں۔ماہرین کے مطابق باداموں میں موجود انٹی آکسائیڈنٹس(تکسیر کش اجزاء)، صحت بخش چربی، میگنیشم اور کاپر (تانبا)،دل اور خون کی شریانوں کی صحت کے لیے بہترین ثابت ہوتے ہیں۔جھریوں کی روک تھام۔بادام میں مینگنیز نامی جز موجود ہوتا ہے جو کولیجن نامی ایک پروٹین کی مقدار بڑھانے میں مدد دیتا ہے اور جلد کو ہموار رکھتا ہے۔ اس میں شامل وٹامن ای بھی بڑھاپے کے اثرات کے خلاف جدوجہد میں مدد دیتا ہے۔ایک طبی تحقیق سے یہ بات سامنے آچکی ہے کہ باداموں میں مٹھاس وغیرہ بہت کم ہوتی ہے اور اس کو روزانہ تھوڑی مقدار میں کھانا میٹابولزم کو بہتر بناکر جسمانی وزن میں کمی لاتا ہے۔دماغ کے لیے بھی بہترین ہے۔یہ بتانے کی ضرورت نہیں کہ بادام کو دماغ کی غذا بھی قرار دیا جاتا ہے جو کہ یاداشت کو بہتر بناتا ہے اور یہ سب وٹامن ای اور اس میں شامل فیٹی ایسڈز کا اثر ہوتا ہے۔ اسی طرح یہ میوہ دماغ پر عمر کے اثرات کو جھاڑنے میں بھی مددگار ثابت ہوتا ہے۔