ہارون آباد(سی این این اردو۔ٹی وی)علاج کے بہانے جعلی پیر کا شادی شدہ خاتون پر تشدد ،حالت خراب ہونے پر جعلی پیر خاتون کو بے بسی کی حالت میں چھوڑ کر فرار ،پولیس نے مقدمہ درج کر کے جعلی پیر کی تلاش شروع کر دی ،نواحی گاؤں 71فور آر کی شادی شدہ خاتون نسیم بی بی کی طبیعت خراب ہونے کی وجہ سے اس پر جنات کا سایہ ہونے کا شبہ کیا گیا جن نکالنے کے نا م نہاد ماہر خودساختہ پر مختاراحمد سکنہ 56فور آر علاج کے لیے خاتون کے گھر پہنچا اور مختلف خود ساختہ طریقوں سے جن نکالنے لگا لوہے کے بٹھل میں آگ اور مرچوں کوجلا کر دھوئیں کے ذریعے خاتون کو اذیت دی گئی اور اس کے علاوہ مختلف طریقوں سے تشدد کرتا رہا جس سے نسیم بی بی کی حالت بہت زیادہ خراب ہو گئی نسیم بی بی کی چیخ و پکار کے باجود بھی جعلی پیر نے تشدد اور خود ساختہ اذیت کا طریقہ جاری رکھا تاہم نسیم بی بی کی حالت غیر ہونے پر جعلی پیر مختار اس کو بے بسی کی کیفیت میں چھوڑ کر فرار ہو گیا جعلی پیر کے خلاف مقدمہ درج کرا دیا ہے پولیس تھانہ صدر مفرور جعلی پیر کی تلاش میں مصروف ہے ۔ایس ایچ او تھانہ صدر محمد عباس شاہ کا کہنا ہے کہ مقدمہ درج کر لیا ہے اور جعلی پیر مختار کی گرفتاری کے لیے چھاپے مار رہے ہیں تاحال گرفتار نہیں ہوا ہے دوسری جانب جعلی پیر مختار احمد کا کہنا ہے کہ یہ لوگ جھے دم کروانے کے لیے خود لے کر گئے تھے خاتون نسیم بی بی نے مجھے گالیاں دینا شروع کر دیں جس پر مجھے غصہ آگیا اور میں نے دو تھپڑ لگا دئیے میں نے خاتون پر تشدد نہیں کیا ہے ۔