لندن(سی این این) یہ تو سبھی جانتے ہیں کہ بازاری عورتیں رقم کے عوض جنسی تعلق قائم کرتی ہیں لیکن برطانیہ میں ایک خاتون ایسی ہے جو اپنے شوہر سے ہی جنسی تعلق کے عوض رقم لیتی ہے اور اس کی وجہ ایسی ہے کہ سن کر ہی آدمی گھبرا جائے۔اس خاتون کا نام سارہ ہے۔ اسے کچھ عرصہ قبل معلوم ہوا کہ اس کا شوہر گزشتہ 30سال سے ایک ہی جسم فروش عورت کے ساتھ جنسی تعلق قائم رکھے ہوئے ہے، جسے وہ ہر بارجنسی تعلق کے عوض 40پاﺅنڈ(تقریباً 6ہزار روپے) رقم ادا کرتا ہے۔جب سارہ کو اس بات کا علم ہوا تو اس نے اپنے شوہر سے علیحدگی کا فیصلہ کیا لیکن شوہر نے کسی طرح اس کو قطع تعلق سے باز رہنے پر رضامند کر لیا۔ اس رضامندی میں سارہ کی طرف سے ایک ہی شرط عائد کی گئی اور وہ یہ تھی کہ اب جب بھی وہ اس کے ساتھ تعلق استوار کرے گا، اسے 40پاﺅنڈ کی رقم ادا کرے گا۔ سنڈے مرکری کو انٹرویو دیتے ہوئے سارا کا کہنا تھا کہ ”جب مجھے اپنے شوہر کے جسم فروش خاتون سے تعلق کے بارے میں علم ہوا تو میں نے اسے چھوڑ دیا لیکن جب وہ مجھے منانے آیا تو میں نے اسے پہلے ایچ آئی وی ٹیسٹ کروانے کو کہا، جب ٹیسٹ میں ثابت ہو گیا کہ اسے یہ مرض لاحق نہیں ہے تو میں نے جسمانی تعلق کے عوض رقم کی شرط رکھی دی جو اس نے قبول کر لی۔ تب سے ہم جب بھی جنسی تعلق قائم کرتے ہیں، وہ پہلے مجھے مقرر کردہ رقم ادا کرتا ہے۔“