کراچی(سی این این)پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ 1973 کا آئین وفاق کی ضمانت ہے،بھٹو شہید کے دیئے ہوئے متفقہ عمرانی معاہدے نے وفاقی اکائیوں کو متحد رکھا ،پیپلز پارٹیکسی کو بھی 18ویں ترمیم کو ہاتھ نہیں لگانے دے گی۔ بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ  آمریتی رجیمز نے 1973ٰ کے آئین کا اصل چہرہ مسخ کردیا،10 اپریل 1986 کو جلاوطنی ختم کر کے وطن واپس آنے کے بعد اور اس سے پہلے سابق وزیراعظم شہید محترمہ بینظیر بھٹو نے جمہوریت و آئین کی بحالی کے لیئے بڑی بہادری سے جدوجہد کی،جس کی پاداش میں آمریتی رجیم نے انہیں قید تنہائی میں رکھا اور پی پی پی کے ہزاروں کارکنان کو جسمانی اذیتیں دیں۔انہوں نے کہا کہ  ایک بار پھر یہ صدر آصف علی زرداری کی زیر قیادت پاکستان پیپلز پارٹی ہی کی حکومت تھی، جس نے 18ویں ترمیم کے ذریعے اپنے اختیارات سے دستبردار ہوکر 1973 کے آئین کو اصل شکل میں بحال کردیا۔ پی پی پی چیئرمین نے کہا کہ ان کی پارٹی کسی کو بھی 18ویں آئینی ترمیم کو ہاتھ نہیں لگانے دے گی، 18ویں ترمیم کی تمام دفعات پر بلا تاخیر من و عن عملدرآمد کیا جائے۔ بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ پاکستان کا آئین اپنے تمام شہریوں کو یکساں حقوق دیتا ہے اور کسی قسم کے ابہام کے بغیرتمام اداروں کا کردار بھی متعین کردیا ہے،یہ پوری قوم اور تمام اداروں کی ذمہ داری ہے کہ وہ آئین کی حفاظت کریں۔